واشنگٹن:اپنے متنازعہ بیان کے لئے مشہور امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے ایک بار پھر اپنے بیان سے سب کو حیران کردیا ہے، اس بار انہوں نے کنیڈا کے وزیر اعظم پر نشانہ لگایا ہے۔ٹرمپ نے کینیڈا کے پی ایم جسٹن ٹروڈو پر تنقید کرتے ہوئے ایک ایسا ٹوئٹ کیا ہے جس کے سبب دونوں ملکوں کے رشتوں میں تلخیاں پیدا ہونا لازمی مانا جارہا ہے۔ایجنسی سے ملی اطلاع کے مطابق کینیڈا میں منعقد جی ۷ ممالک کے ۴۴ویں تقریب میں امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے کینیڈا کے پی ایم جسٹن ٹروڈو کو ایک کمزور اور ڈرپوک شخص بتادیا ،جس کے بعد یہ تقریب ٹرمپ اور ٹروڈو کے مابین ہوئے زبانی جنگ کی نذر ہوکر رہ گئی ۔ واضح رہے کہ کینیڈا کے پی ایم نے ایک پریس کے نام جاری بیانیہ میں کہا تھا کہ جی ۷ کے تمام ممالک مشترکہ مواصلات پر متفق ہیں ،لیکن ڈونالڈ ٹرمپ نے کینیڈا کے پی ایم کی طرف سے  دیئے گئے اس بیان کو جھوٹ پر مبنی بتاتے ہوئے کہا کہ امریکہ کسی بھی ملک کو غیر قانونی طور پر معاشی فائدہ اٹھانے کی اجازت نہیں دے گا۔یاد رہے کہ جی ۷ کے اراکین ملکوں میں امریکہ ،اٹلی،جرمنی،برطانیہ اور کینیڈا ہے ۔ٹرمپ اور ٹروڈو کے مابین ہوئے اس تنازعہ کے کارن یہ تقریب بحسن و خوبی اختتام کو نہیں پہنچ سکی اور صرف ایک پریس ریلیز جاری کرکے ختم کردیا گیا۔اس تقریب میں زیادہ تر ممالک ایران اور روس سے تجارتی تعلقات بہتر بنانے کی بات کر رہے تھے اور یہ بات ڈونالڈ ٹرمپ کو پسند نہیں آئی جس کی وجہ سے تقریب کو بیچ میں ہی چھوڑ کر ٹرمپ امریکہ لوٹ گئے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here