فیض احمد فیض کی بیٹی کے ساتھ وزارت اطلاعات و نشریات نے کی شرمناک حرکت

0

نئی دہلی: اردو ادب کے مشہور شاعر فیض احمد فیض کی بیٹی منیزہ ہاشمی کو دہلی میںپندرہویں ایشیا میڈیا سمٹ میں اسپیکر کے طور پر شامل ہونے کا دعوت نامہ دے کر اس پروگرام میں شامل نہیں ہونے دیا گیا ۔منیزہ ہاشمی ایک مشہور ومعروف شخصیت ہیں ۔ اس پروگرام کا انعقاد وزرارت برائے اطلاعات و نشریات اور پرسار بھارتی کی طرف سے کیا گیا تھا۔سپریم کورٹ کے مشہور وکیل پرشانت بھوشن نے اپنے ٹیوٹر اکاﺅنٹ پر اس واقعہ کی سخت الفاظ میں مذمت کی ہے۔ایک چینل سے گفتگو کرتے ہوئے منیزہ کہتی ہیں کہ اتنے ڈر کی وجہ کیا ہے؟ ہم کیا پاکستان سے چھوت کی بیماری لے کر آئے ہیں؟مطلب رجسٹریشن تک نہیں کرنے دیا گیا۔ یہ اچھا نہیں ہوا؟میں تمام امن پسند لوگوں کے حوالے سے کہنا چاہتی ہوں کہ اس طرح کا سلوک نہیں ہونا چاہیے، دروازے کھلے رکھیے۔ سب سے بات کیجیے اور سب کی بات سنئے ۔ اور اپنی رائے کا اظہار کیجئے۔ لیکن اس طرح نہیں کرنا چاہیے کہ کسی کے وجود کو نظر انداز کر دیاجائے۔
پاکستان اچھا ہے یا برا لیکن وجود میں ہے، میزبان یہ سلوک نہیں کرتا ہے اپنے مہمان کے ساتھ۔منیزہ ہاشمی آگے کہتی ہیں کہ جب اس کے تعلق سے اے ائی بی ڈی کے ذمہ دار آئے تو انہوں نے کہا کہ مجھے معاف کر دیجئے ، مجھے ابھی ابھی معلوم ہوا ہے کہ انہوں نے مجھ سے ایسا کہا ہے کہ آپ اس کانفرنس میں شرکت نہیں کر سکتی ہیں اور کانفرنس کے لئے رجسٹریشن بھی نہیں کرا سکتی ہیں۔
پی ایم او اوروزیر خارجہ سشما سواراج کو ٹیگ کرتے ہوئے ہاشمی کے بیٹے علی ہاشمی نے لکھا ہے کہ ، یہ ہے آپ کا شائنگ انڈیا ؟میری72 سالہ ماں اور فیض احمد فیض کی بیٹی کو سرکاری طور پر دعوت دینے کے باوجود کانفرنس میں شرکت کی اجازت نہیں دی گئی۔ یہ بہت ہی شرمناک ہے۔
واضح رہے، فیض احمد فیض کی بیٹی منیزہ ہاشمی کو پاکستانی کشف کے کریئٹیو اینڈ میڈیا چیف کے طور پر دعوت دی گئی تھی۔ حالانکہ 9 مئی کو وزارت اطلاعات و نشریات کی طرف سے فائنل پروگرام کی دی گئی رپورٹ میں ہاشمی کا نام نہیں تھا۔ وزارت کے نمائندوںنے خبر دی ہے کہ اس کانفرنس کا حتمی فیصلہ چند لوگوں کو لینا تھا، ایجنڈے میں آخر وقت میں تبدیلی کی گئی تھی۔

You might also like More from author

Leave A Reply

Your email address will not be published.