موریشس سے آبیناز جان علی کی رپورٹ

پورٹ لوئس:امسال موریشس کی پچاسویں آزادی کی سالگرہ کو نہایت تزک و احتشام سے منایا جا رہا ہے۔ 9 مارچ کو تعلیمی اداروں میں اس خاص دن کو دلفریب انداز سے منایا گیا۔ اس کے علاوہ موریشس کے دارالحکومت پورٹ لوئیس میں ایک پریڈ کا انعقاد ہوا جس میں ملک بھر کے نوجوانوں اور طلباءنے شرکت کر کے اس کو کامیاب بنایا۔ اس سال آزادی کی تقریبات کا مرکزی خیال ’ہاتھوں میں ہاتھ‘ ہے۔ موریشس میں ہندوستانی، چینی، یورپی اور افریقی انسداد مل جل کر رہتے ہیں۔ اس بظاہر نسلی فرق کے باوجود بحرِ ہند کا یہ جزیرہ دنیا کے لئے امن اور بھائی چارگی کی عمدہ مثال ہے۔
11 مارچ 2018ء کو وزارتِ تعلیم اور وزارتِ نوجوان اور کھیل کود کے اشتراک سے ہندوستان کے صدرِ جمہوریہ سری رام ناتھ کوبندبطور خصوصی مہمان کا سرزمین ِ موریشس میں پرخلوص و پرتپاک خیر مقدم ہوا۔ موریشس کی صدرِ جمہوریہ آمینہ غارب فاکم صاحبہ سے ملاقات کے بعدمہاتما گاندھی انستی ٹیوٹ میں ان کی پہلی تقریب رکھی گئی۔ اس موقعہ پر ایم۔ جی۔ آئی کے میدان میں عظیم شامیانہ لگایا گیا جس میںدو ہزار سے زائد طلباءاور نوجوانوں نے اپنی شرکت سے اس محفل کو کاسراہا۔ ڈائس کوہندوستانی طرز سے دیدہ زیب پھولوں سے آراستہ کیا گیا۔
ساڑھے تین بجے ہندوستان کے صدرِ جمہوریہ تشریف لائے۔ ان کی ایلہ اور ہندوستان سے ممدوبین بھی ان کے ہمراہ تھے۔ سب سے پہلے ادرے کے آنگن میں موجود مہاتما گاندھی کے مجسمہ کو ہار پہنایا گیا۔ مہاتما گاندھی انسٹی ٹیوٹ کا نصب العین موریشس میں ہندوستانی زبانوں اور ہندوستانی ثقافت کا فروغ ہے۔ نیز ایم۔ جی۔ آئی کے موریشس کے مختلف علاقوں میں واقع سات اسکولوں کے ذریعے بچوں میں مہاتما گاندھی اور ربندر ناتھ ٹیگور جیسے عظیم مفکروں سے ان کی ذہن کو منور کرنا اور ان کی شخصیت کی تکمیل کرنا ہے۔
’جیو اور جینے دو یہ ہمارا نعرہ ہے‘ کے عنوان پر ایم۔جی۔ آئی کے طلباء نے استقبالیہ گیت پیش کیاجس میں ہندی کے ساتھ ساتھ تمل اور ٹیلگو کے الفاظ بھی شامل تھے۔
وزیرِ نوجوان اور کھیل کودمحترم اسٹیفن ٹوسینٹ صاحب نے خوشی کا اظہار کرتے ہوئے ہندوستان کے صدر کا استقبال کیا۔ محترم وزیر کے مطابق صدرِ ہند عالمی امن و اتحاد کے قائل ہیں۔ انہوں نے مزید بتایا کہ موریشس اور ہندوستان میں ازل سے مضبوط تعلقات رہے ہیں۔ دنیا کے سب سے بڑے جمہوریہ کے صدر کو ان کے پہلے دورے پر نیک خواہشات پیش کئے۔ اس کے علاوہ انہوں نے موریشس کے روشن مستقبل کی پزیرائی بھی کی اور کہا کہ اس کی باگ دوڑ نوجوانوں کے ہاتھوں میں ہے۔

The President, Shri Ram Nath Kovind inspecting the Guard of Honour, during the Ceremonial Reception, at Sir Seewoosagur International Airport, in Mauritius on March 11, 2018.
The Prime Minister of the Republic of Mauritius, Mr. Pravind Kumar Jugnauth is also seen.

ان کے بعد صدرِ جمہوریہ ہندوستان رام ناتھ کوبند صاحب نے فرمایا کہ موریشس آنے کا ان کاخواب شرمندئہ تعبیر ہو پایاہے۔ انہوں نے اپنے ممدوبین کا تعرف کرایا۔ انہوں نے پھر بتایا کہ موریشس ہندوستان کے لئے ایک خاص ملک ہے۔ ان کے استقبال کے لئے جس شفقت کا مظاہرہ کیا گیا وہ اس سے بے حد خوش ہیں۔ موریشس والوں کے مسکراتے چہروں نے ان کو حد درجہ متاثر کیا۔ یہاں آکر انہیں گھر جیسا محسوس ہو رہا ہے۔ انہوں نے پھر کریول میں ہمکلامی کر کے سامعین کا دل جیت لیا۔ انہوں نے بتایا کہ نوجوان ملک کے مستقبل ہیں اور پچاسویں آزادی کی سالگرہ کی مبارکباد پیش کی۔ رام ناتھ کوبند صاحب نے اس بات کی نشان دہی کی کہ دوسو سال پہلے ہمارے اباﺅ اجداد یہاں آئے اور ان کی آمد کی تفصیلات ابھی بھی محفوظ ہیں۔ 1834میں زمین میں کام کرنے کی غرض سے پہلے مزدور معاعدے کے تحت ہندوستان سے موریشس آئے۔ ہندوستان اور موریشس کی تقدیر ایک ہے۔ دونو ں ملک آزادی میں یقین رکھتے ہیں اور دونوں کے اقدار ایک ہیں۔ ہندوستان سے سرکاری دورے پر وزیر آتے رہتے ہیں۔ مہاتما گاندھی 1901ء میں یہاں آئے تھے اور چھ سال بعد انہوں نے مینلال ڈاکٹر کو موریشس بھیجا تھا۔ اس کے بعد سری رام ناتھ کوبند جی نے ہندوستان کے اقتصادی اور معاشی صورتِ حال کا نقشہ کھینچتے ہوئے کہا کہ 2024ء تک ہندوستان کا نصب العین ہندوستان کے معاشرے کو جدید ترین بنانا ہے۔ اس ضمن میں اسمارٹ سٹیز اور نیو سٹیز کی تعمیر، ماحولیاتی تحفظ، صفائی، الیکڑک بسیں اور ریلوے لائنیںبنائی جائیں گی۔ وہ ہندوستانی نوجوانو ں کو اونچے مقاصد کی طرف راغب کرنا چاہتے ہیں۔ انہوں نے یہ بھی فرمایا کہ زاعت اور تعلیم کے میدان میں ہندوستان موریشس کا شریکِ کار بنے گا۔ ان کے مطابق موریشس سے جو طلباءہندوستان میں اعلیٰ تعلیم حاصل کر نے کے بعد آتے ہیں وہ ہندوستان کے سفیر بن کر واپس آتے ہیں۔ اپنی تقریر میں وقتاً فوقتاً ہندی میں گفتگو کر کے صدرِ ہندوستان نے نوجوانوں کو خود مختاری کا درس دیا۔ ان کو یاد دلایا کہ وہ ملک کے روشن مستقبل ہیںاور وہ محنت سے تعلیم حاصل کر کے کے بحرِ ہند کے اس جزیرے کی معاشی طاقت بنیں۔
اظہار تشکر میں ایم۔ جی۔ آئی کے چیز مین میٹو صاحب نے صدرِ جمہوریہ ہندوستان، تمام وزرءا اور نوجوانوں کا شکریہ ادا کیا جنہوں نے سری رام ناتھ کوبند کا پیغام بغور سنا۔ انہوں نے یہ گزارش بھی ظاہر کی کہ ہندوستان میں موریشس استڈیز کی ایک چیئر کا قیام ہو۔
سرکاری تقریب کے بعد نوجوان نسل کے لئے ثقافتی پروگرام کا انعقاد ہوا جس میں موریشس میں رائع مختلف تہذیبیں ابھر کر سامنے آئیں۔

Facebook Comments

13 COMMENTS

  1. Hey I know this is off topic but I was wondering if you knew of any widgets I could add to my blog that automatically tweet my newest twitter updates. I’ve been looking for a plug-in like this for quite some time and was hoping maybe you would have some experience with something like this. Please let me know if you run into anything. I truly enjoy reading your blog and I look forward to your new updates.

  2. Hi would you mind letting me know which web host you’re working with? I’ve loaded your blog in 3 different web browsers and I must say this blog loads a lot faster then most. Can you recommend a good internet hosting provider at a honest price? Many thanks, I appreciate it!

  3. Heya excellent website! Does running a blog like this require a lot of work? I have virtually no knowledge of computer programming however I had been hoping to start my own blog soon. Anyways, if you have any recommendations or tips for new blog owners please share. I understand this is off subject nevertheless I just needed to ask. Thanks a lot!

  4. Fantastic blog you have here but I was curious about if you knew of any community forums that cover the same topics talked about in this article? I’d really love to be a part of community where I can get responses from other experienced individuals that share the same interest. If you have any recommendations, please let me know. Kudos!

  5. I think this is one of the most important info for me. And i’m glad reading your article. But want to remark on some general things, The web site style is ideal, the articles is really nice : D. Good job, cheers

  6. Please let me know if you’re looking for a writer for your weblog. You have some really great articles and I feel I would be a good asset. If you ever want to take some of the load off, I’d really like to write some articles for your blog in exchange for a link back to mine. Please blast me an email if interested. Regards!

  7. I’ve been absent for some time, but now I remember why I used to love this web site. Thanks , I¡¦ll try and check back more often. How frequently you update your website?

  8. Have you ever considered writing an ebook or guest authoring on other sites? I have a blog centered on the same information you discuss and would love to have you share some stories/information. I know my subscribers would enjoy your work. If you’re even remotely interested, feel free to send me an e mail.

  9. Very good blog you have here but I was curious if you knew of any forums that cover the same topics discussed in this article? I’d really like to be a part of online community where I can get responses from other knowledgeable people that share the same interest. If you have any recommendations, please let me know. Cheers!

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here