امریکہ کے خلاف جہاد کا وقت آگیا ہے:ایمن الظواہری

0

واشنگٹن: القاعدہ دہشت گرد تنظیم کے سرغنہ ایمن الظواہری نے تمام مسلمانوں سے اپیل کی ہے کہ وہ امریکہ کے خلاف ہتھیار اٹھا لیں، اور جہاد کا اعلان کر دیں کیوں کہ امریکہ کی فلسطین کے ساتھ امن کی بات چیت بے نتیجہ ثابت ہوئی ہے اور یہ بات امریکہ کے عمل سے صاف ظاہر ہے کہ وہ اپنے سفارتخانے کو یروشلم منتقل کر رہا ہے،جب کہ دنیا کے زیادہ تر ممالک نے اس کے اس عمل کی شدید مخالفت کی ہے۔
واضح رہے کہ پچھلے سال دسمبر میں امریکہ نے اپنی سفارتخانہ کو یروشلم منتقل کرنے کا اعلان کیاتھا جس کی بیشتر ممالک نے پر زور مذمت کی تھی امریکہ اس کے باوجود اپنے سفارتخانے کو تل ابیب سے یروشلم منتقل کرنے پر مصر ہے۔ امریکہ نے پورے یروشلم کو اسرائیل کی دارالحکومت تسلیم کر لیا ہے۔


الظواہری نے اپنے 5 منٹ کے ویڈیو میں تمام مسلمانوں سے کہا ہے کہ تل ابیب مسلمانوں کی بھی سرزمین ہے ۔یاد رہے کہ الظواہری اسامہ بن لادن کے بعد القاعدہ کا سپریم لیڈر ہے ، اس نے اپنے ویڈیو میں کہا کہ ڈونالڈ ٹرنپ کی منشا صاف ظاہر کرتی ہے کہ وہ فلسطین کو قبول نہیں کرتا ہے،اب وقت آگیا ہے کہ امریکہ کے خلاف ہتھیار اٹھا لئے جائیں،اگر ہمیں زندہ رہنا ہے۔
13 مئی کو اسرائیل میںیروشلم ڈے کے موقع پر امریکہ کے حامیوں نے جلوس نکالا۔1948میں اسرائیل نے آزادی کااعلان کیا تھا اور خود کو ایک الگ ملک بتایا تھا۔ اسرائیل نے 1967 میں وسط مشرق جنگ میں مشرقی یروشلم پر قبضہ کر لیا تھا۔ اس وجہ سے سات لاکھ فلسطینیوں کو اپنا ملک چھوڑ کے جانا پڑا تھا۔ادھر غزہ میں اسرائیل ، امریکہ مخالف مظاہرہ کی تیاری چل رہی ہے۔
اسرائیل پورے یروشلم کو اپنی دارالحکومت بتاتا ہے جبکہ فلسطینی مشرقی یروشلم کو اپنا دارالحکومت بتاتے ہیں۔ معلوم رہے مشرقی یروشلم میں یہودی، عیسائی،اور مسلم تینوںمذاہب کے مقدس مقامات ہیں۔ یہاںواقع ٹیمپل ماﺅنٹ جہاں یہودیوں کا سب سے بڑا مقدس مقام ہے، وہیں مسجد اقصی مسلمانوں کا قبل اول بھی ہے۔
واضح رہے کہ اقوام متحدہ اور دنیا کے زیادہ تر ممالک پورے یروشلم پر اسرائیل کے دعوے کو تسلیم نہیں کرتے ہیں۔یہاں کسی بھی ملک کا سفارتخانہ نہیں ہے۔

You might also like More from author

Leave A Reply

Your email address will not be published.