مشرقی لوک سبھا سیٹ سے عام آدمی پارٹی کی امیدوار آتشی کا ذاکر نگر میں رابطہ میٹنگ سے خطاب

نئی دہلی،11جنوری ۔مشرقی دہلی سے عام آدمی پارٹی کی لوک سبھا پربھاری اور ممکنہ امیدوار آتشی(آتشی مارلینا)نے ذاکر نگر اوکھلا میں رابطہ میٹنگ میں لوگوں کو خطاب کیا ۔اس رابطہ میٹنگ کا انعقاد عام آدمی پارٹی کے کارکن نمبردار عارض خان نے اپنے گھر پر کیا تھا۔آتشی نے آئندہ عام انتخابات میں ووٹوں کا حساب کتاب سمجھاتے ہوئے کہا کہ اگر رائے دہندگان کنفیوژن سے بچتے ہوئے اپنے ووٹوں کا صحیح استعمال کریں گے تو دہلی کی ساتوں لوک سبھا سیٹوں پر بی جے پی کی شکست یقینی ہے۔آتشی نے 2014کے عام انتخابات میں دہلی میں تمام سیاسی پارٹیوں کو ملنے والے کل ووٹوں کا حساب کتاب سمجھاتے ہوئے کہا کہ بی جے پی کو مودی لہر میں 46فیصد، عام آدمی پارٹی کو 33فیصد اور کانگریس کو کل 15فیصد ووٹ ملے تھے یعنی کانگریس تیسرے نمبر پر تھی ۔انہوں نے آگے کہا کہ 2015کے اسمبلی انتخابات میں بھی کانگریس تیسرے نمبر پر تھی جبکہ 2017کے کارپوریشن انتخابات میں بھی کانگریس تیسرے نمبر پر رہی اور ابھی بھی تمام ایجنسیوں کے سروے میں کانگریس دہلی میں تیسرے نمبر ہی ہے اور بی جے پی کے ووٹ فیصد میں تقریبا 10فیصد ووٹوں کی کمی درج کی جارہی ہے ایسے میں اب یہ 10فیصد ووٹ سب سے زیادہ اہم ہوگئے ہیں اگر یہ عام آدمی پارٹی کو ملیں گے تو اس کا ووٹ فیصد 43ہوجائے گا اور بی جے پی کا 36فیصد رہ جائے گا اور اگر کانگریس کو جائیں گے تو کانگریس کا ووٹ فیصد بڑھکر 25ہوجائے گا تاہم وہ بی جے پی کو شکست نہیں دے سکے گی اور بی جے پی پھر سب سے بڑی پارٹی ہونے کی وجہ سے ساتوں سیٹیں جیت جائے گی ۔

انہوں نے مزید سمجھاتے ہوئے کہا کہ آر ایس ایس اور بی جے پی کے لوگوں کی پالیسی یہ ہے کہ کسی طرح یہ 10فیصد ووٹ تقسیم ہوکر کانگریس کو چلا جائے اور عام آدمی پارٹی کو نہ ملے اس لئے وہ جگہ جگہ بی جے پی کی برائی کرتے ہوئے کانگریس کو بہتر بتا رہے ہیں تاکہ ووٹوں کی تقسیم یقینی ہوجائے ۔آتشی نے کہا کہ آپ کو اسی کھیل کو سمجھنا ہے اور ووٹوں کی تقسیم سے بچتے ہوئے ایسی پارٹی کو ووٹ دینا ہے جو بی جے پی کی شکست کو یقینی بنا سکے۔انہوں نے کہا کہ گزشتہ ساڑھے تین سال میں دہلی کی عام آدمی پارٹی حکومت کو مرکزی حکومت نے ہر محاذ پر پریشان کیا اور عوام کے کاموں کی ساری فائلیں روک کر رکھیں پھر بھی ہم نے ہر طرح سے لڑ جھگڑ کر کاموں کو آگے بڑھایااب اگر ہم پارلیمنٹ میں مضبوط ہوں گے تو دہلی کی عوام کے کام آسانی سے ہوسکیں گے۔غور طلب ہے کہ آتشی دہلی حکومت کے ایجوکیشن ڈپارٹمنٹ کی رضاکارانہ صلاح کار تھیں اور انہوں نے راجدھانی کے سرکاری اسکولوں کی کایا پلٹ کرنے اور تعلیم کا معیار بڑھانے میں اہم کردار ادا کیا ہے تاہم ایل جی نے ان کی تعیناتی کو رد کردیا تھا۔اخیر میں میٹنگ کے روح رواں نمبردار عارض خان نے لوگوں کا شکریہ ادا کرتے ہوئے انھیں ڈنر کی دعوت دی۔

Facebook Comments