کلکتہ:شاردہ چٹ فنڈ گھوٹالے کی جانچ کو لیکر ہوا تنازع سپریم کورٹ پہنچ چکا ہے،سوموار کو سی بی آئی نے عدالت میں عرضی دائر کی ہے،جانچ ایجنسی نے کہا ہے کہ کلکتہ پولس کمشنر راجیو کمار ثبوت مٹا سکتے ہیں،اس پر چیف جسٹس رنجن گگوئی نے کہا کہ اگر وہ ایسا خیال بھی لائیں تو ہمیں ثبوت دینا،ہم ان پر ایسی سخت کارروائی کریں گے کہ ان کو پچھتانا پڑے گا،اس سے پہلے سرکاری وکیل نے اس معاملے میں سوموار کو ہی سماعت کی مانگ کی تھی،جس پر چیف جسٹس نے کہا کہ اس پر فوری سماعت ضروری نہیں ہے،اس پر سماعت منگل کے روز کی جائے گی،جانچ ایجنسی نے عدالت میں اتوار رات ہوئے پورے واقعے کی تفصیل بتائی ،کہا کہ کلکتہ پولس کمشنر راجیو کمار کو کئی بار نوٹس بھیجی گئی ہے،انہوں نے اس سلسلے میں ہمارا تعاون نہیں کیا ہےاور جانچ میں رخنہ ڈالنے کی کوشش کی ہے،ایسے میں گھوٹالے کی جانچ کو لیکر پوچھتاچھ کرنے پہنچی سی بی آئی ٹیم کے پانچ افسروں کو حراست میں لے لیا گیا ہے،وہیں سی بی آئی کی اس کارروائی کے خلاف وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی نے اتوار دیر رات سے دھرنے پر بیٹھی ہوئی ہیں،انہوں نے مرکزی سرکار پر سی بی آئی کا ناجائز استعمال کرنے کا الزام لگایا ہے،کانگریس صدر راہل گاندھی نے بھی ٹوئٹ کر ممتا کی حمایت میں آواز بلند کی ہے،اور اپوزیشن کےاتحاد پر زور دیا ہے۔حالنکہ ماکپا لیڈر سیتارام یچوری نے مہاگٹھ بندھن کی پارٹیوں سے الگ ہٹ کر ریاستی سرکار پر ہی نشانہ لگا دیا ہے،انہوں نے کہا ہے کہ ترنمول کانگریس کا گھوٹالہ بہت پہلے ہی منظر عام پر آچکا ہے لیکن مودی سرکار چپ رہی کیوں کہ اس کے ماسٹر مائنڈ نے بھاجپا جوائن کر لی ہے،اور ترنمول سرکار اب دھرنہ کرکے ڈرامہ کر رہی ہے۔

Facebook Comments