نئی دہلی:کانگریس کے مشہور لیڈر نوجوت سنگھ سدھو اس بار الیکشن کمیشن کے عتاب کے شکار ہوگئے،کئی بار ان کے تقاریر پر سوال اٹھائے گئے،شکایتیں کی گئیں ،لیکن ہر بار نوجوت سنگھ سدھو بچ نکلتے تھے ،لیکن اس بار ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کے جرم میں نوجوت سنگھ سدھوکو الیکشن کمیشن نے بڑی سزا دی ہے۔الیکشن کمیشن نے نوجوت سنگھ سدھو  ۷۲ گھنے  کی پابندی لگادی ہے۔دراصل نوجوت سنگھ سدھو نے بہار کے کٹیہار اور برسوئی میں انتخابی جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے کہا تھا کہ میں آپ کو متنبہ کرنے آیا ہوں مسلم بھائیو،یہ بانٹ رہے ہیں آپ کو،یہ یہاں اویسی جیسے لوگوں کو لیکر،ایک نئی پارٹی کھڑی کر آپ لوگوں کا ووٹ بانٹ کر جیتنا چاہتے ہیں،اگر آپ لوگ متحد ہوئے ،اکھٹے ہوکر ووٹ ڈالا تو مودی سلٹ جائے گا۔

بتادیں کہ الیکشن کمیشن نے جو پابندی لگائی ہے وہ کل یعنی منگل کی صبح دس بجے سے شروع ہوگا اور اگلے ۷۲ گھنٹے تک نوجوت سنگھ سدھو کے انتخابی مہم میں شامل ہونے،پریس کانفرنس کرنے اور ریلی وغیرہ کا حصہ بننے پر پابندی ہوگی ،کل ملا کر اگلے چار دنوں تک نوجوت سنگھ سدھوکو گھر میں رہنا ہوگا۔

Facebook Comments