نئی دہلی:سیاسی ماہرین کا ماننا ہے کہ ریاست گوا میں بی جے پی کی سرکار تب تک باقی ہے جب تک منوہر پاریکر اس ریاست میں وزیراعلیٰ بنے ہوئے ہیں۔وہیں دوسری سب سے عجیب بات یہ سامنے اْئی ہے کہ اب یہی بات بی جے پی لیڈر اور اسمبلی کے ڈپٹی اسپیکرمائیکل لوبو نے بھی کہہ دی ہے۔بھاجپا رکن اسمبلی مائیکل لوبو کا کہنا ہے کہ جس دن منوہر پاریکر کرسی چھوڑیں گے،یا انہیں کچھ ہوجاتا ہے تو ریاست میں بھاجپا اور نیت کے بیچ اتحاد ختم ہونے کی امید بڑھ جائے گی اور یہ ریاست بھی بھاجپا کی سرکار سے آزاد ہوجائے گی،ساتھ ہی انہوں نے یہ بھی کہا کہ جب تک منوہر پاریکر جی اس صوبہ کے سی ایم ہیں تب تک سرکار کو کوئی خطرہ نہیں ہے،مائیکل نے کہا کہ گوا کے سی ایم منوہر پاریکر بہت بیمار ہیں ،لوگوں کو سمجھنا ہوگا کہ وہ بیمار ہیں ،جو بیماری ان کو ہے اس کا کوئی علاج نہیں ہے،اوپر والے کی مہربانی سے وہ اب تک زندہ ہیں ،اوپر والے نے ان کو کام کرتے رہنے کا موقع دیا ہے۔مائیکل لوبو اس سے پہلے بھی سرخیاں بٹور چکے ہیں ،بتا دیں کہ اس سے پہلے انہوں نے کانگریس صدر راہل گاندھی کی سادگی اور ان کے نرم رویے کی جم کر تعریف کرچکے ہیں۔

Facebook Comments