نئی دہلی:سابق وزیراعظم راجیو گاندھی قتل کیس میں جیل کی سزا کاٹ رہی نلینی سری ہرن نے ویلور جیل میں کل شام سے بھوک ہڑتال شروع کردی ہے۔آپ کو بتادیں کہ نلینی نے اپنے شوہر کی حمایت میں بھوک ہڑتال شروع کی ،نلینی کے شوہر بھی ایک دن پہلے بھوک غیر معینہ مدت کیلئے بھوک ہڑتال پر بیٹھ گئے ہیں اور اب نلینی بھی اپنے شوہر کا ساتھ دینے کیلئے بھوک ہڑتال شروع کردی ہے،ان دونوں کا مطالبہ ہے کہ راجیوگاندھی قتل کیس میں ملزم قرار دیئے گئے تما ساتوں مجرموں کو اس کیس سے آزاد کیا جائے۔نلینی نے گورنر کو اپنے مکتوب میں اس کیس کے سلسلے میں ان کی رہائی میں ہورہی تاخیر سے مایوسی کا اظہار کیا ہے،انہوں نے اپنے مکتوب میں لکھا ہے کہ میں اس دنیا سے رخصت ہونے کیلئے ۹ فروری کی صبح سے جب تک میری روح پرواز نہ کرجائے تب تک کیلئے بھوک ہڑتال پر رہوں گی،آپ شکریہ اور الوداع۔یہ بات انہوں نے اپنے خط میں لکھی ہے،نلینی کا کہنا ہے کہ گورنر نے اب تک کوئی فیصلہ میری رہائی کے سلسلہ میں نہیں لیا ہے،حالانکہ ریاست کی سرکار نے قبل از وقت رہائی کی سفارش بھی کر دی ہے،اور جیل سے رہائی میں ہورہی تاخیر کے سبب دنیا سے رہائی کیلئے مجبور ہیں ۔بتادیں کہ نلینی اور اس کے شوہر مرگن سمیت دیگر سات مجرموں کو اس کیس میں پھانسی کی سزا سنائی گئی ،لیکن بعد میں سن ۲۰۰۰ میں سونیا گاندھی کی دخل کے بعد سزائے موت عمر قید میں بدل گئی،۲۵ سالوں سے جیل میں بند نلینی سری ہرن اب یا تو جیل سے جلد از جلد باہر آنا چاہتی ہے یا پھر دنیا چھوڑنا چاہتی ہے ،شاید ایسا بھی ممکن ہے کہ گورنر کا دھیان اپنی طرف لانے کیلئے نلینی نے اپنے خط میں ایسی بات لکھی ہو۔

Facebook Comments