لکھنو :اترپردیش میں یوگی سرکار کے مشہور ومعروف وزیر اوم پرکاش راج بھر نے ایک بار پھر متنازع بیان دیا ہے،انہوں نے ایک تقریب میں خطاب کے دوران عوام سے پوچھا کی کیا آپ نےآپ نے کبھی دیکھا یا سنا ہے کہ فساد میں کسی بڑے لیڈر کی موت ہوئی ہو،سوال یہ ہے کہ فساد میں لیڈر کی جان کیوں نہیں جاتی،جو لیڈر ہندو مسلم فساد کراتے ہیں ایسے لیڈروں کو آگ لگا کر جلا دو،تاکہ وہ سمجھ جائے کی ہم دوسرے کو نہیں جلانے دیں گے،انہوں نے مزید کہا کہ ریزرویشن بل ایک بھرم جال ہے،ملک کی عوام اس میں ۷۰ سال سے پھنسی ہوئی ہے،ذاتی،غریبی اور مندر مسجد کے نام پر عوام کو لڑا کر لیڈران اپنا الو سیدھا کررہے ہیں،یہ سب کو ہندو مسلم میں بانٹتے ہیں،بھارت کا دستور کہتا ہےکہ جو ہندوستان کا ووٹر ہوگیا وہ ہندوستان کا شہری ہوگیا،آپ ان کو ملک سے نہیں نکال سکتے۔

اس دوران انہوں نے اپنی سرکار پرحملہ کرتے ہوئے کہا کہ اگر سیٹ کی تقسیم پر کوئی بات نہیں بنتی ہے تو ان کی پارٹی تمام ۸۰ سیٹوں پر اپنے امیدوار کو لڑائے گی،انہوں نے یہ بھی کہ اترپردیش میں بی جے پی کے لیڈر گٹھ بندھن کی عزت نہیں کرتے جس کا اثر آنے والے لوک سبھا انتخابات میں دیکھنے کو ملے گا۔یاد رہے کہ اوم پرکاش کی پارٹی سہیلدیو بھارتیہ سماج پارٹی یوپی میں بھاجپا کو حمایت دے رہی ہے،اور اوم پرکاش یوگی سرکار میں وزیر ہیں۔

Facebook Comments