نئی دہلی:دہلی اسمبلی انتخاب کیلئے ووٹنگ کا عمل مکمل ہوچکا ہے۔قریب ساٹھ فیصد تک دہلی میں ووٹنگ ہوئی ہے اور ووٹنگ کے اختتام کے بعد  مختلف ٹی وی چینلوں اور نیوز ایجنسیوں کی طرف سے کئے گئے ایگزٹ پول نے بھی دہلی کی سیاسی ہوا کا رخ بتا دیا ہے۔دہلی اسمبلی انتخاب کے اختتام کے بعد چینلوں نے جو ایگزٹ پول دکھایا ہے اس میں عام آدمی پارٹی کی تیسری بار حکومت بنتی نظر آرہی ہے،بیشتر ٹی وی چینلوں کی طرف سے عام آدمی پارٹی کو پچاس سیٹوں  سے زیادہ دی جا رہی ہیں ،یعنی کل ملاکر یہ مان لیا جائے کہ دہلی میں بی جے پی کی ساری طاقتیں ناکام ہوگئیں اور کوئی بھی حربہ کامیاب نہیں ہوسکا۔ایسے میں ایک خاص بات کی طرف اشارہ ضروری ہے۔اور اس کیلئے ہمیں پرشانت کشور کو نہیں بھولنا چاہیے۔

دراصل سیاسی اسٹریٹیجی تیار کرنے کیلئے مشہور پرشانت کشور نے دہلی میں عام آدمی پارٹی کی سیاسی حکمت عملی تیار کی تھی،اس سے پہلے وہ بی جے پی کیلئے ۲۰۱۴ میں اوراس کے بعد بہار میں جے ڈی یو کیلئے حکمت عملی تیار کرچکے ہیں جن میں ان کو بہت بڑی کامیابی بھی ملی اور وہیں سے ان کی پہچان بھی بنی اور ایک بار پھر دہلی میں عام آدمی پارٹی کو بھاری اکثریت کے قریب پہنچانے میں پرشانت کشور کے اسٹریٹیجی نے کمال کردیا ہے۔پرشانت کشور نے عام آدمی پارٹی کیلئے اس انداز میں حکمت عملی تیار کی تھی کہ بی جے پی کے تمام حربے ناکام ہوگئے اور کانگریس کو زیرو تک پہنچا دیا ہے۔ایسے میں پرشانت کشور کے سیاسی مستقبل کو لیکر قیاس آرائیاں تیز ہوگئی ہیں ۔خبر یہ بھی ہے کہ پرشانت کشور اب عام آدمی پارٹی کی رکنیت حاصل کرسکتے ہیں اور باضابطہ عام آدمی پارٹی کے ساتھ جانے کا اعلان کرسکتے ہیں ،وہیں ذرائع کا یہ بھی کہنا ہے کہ پرشانت کشور ٹی ایم سی کی طرف جانے کیلئے بھی سوچ رہے ہیں۔لیکن اس بیچ سب سے زیادہ اہم بات یہ ہے کہ اس انتخابی جنگ کا اصل ہیرو پرشانت کشور ہی ہیں ،جنہوں نے کجریوال کی سرکار کو دہلی میں ایک بار پھر مستحکم کردیا ہے۔

Facebook Comments