فیضان قریشی کی رپورٹ

ادبی مرکز کمراز کشمیر کی طرف سے ٹیگور ہال سرینگر میں 39واں سالانہ کشمیری کانفرنس کا انعقاد کیا گیا ۔کانفرنس کا آغاز شیخ العالم علیہ رحمہ کے کلام سے ہوا جسے پڑھنے کی سعادت مسرت النسا نے حاصل کی۔اس کے بعد مرکز کا ترانہ پیش کیا گیا ۔ادبی مرکز کمراز کے صدر جناب فاروق رفیع آبادی نے خطبہ استقبالیہ پیش کرتے ہوے کشمیری زبان کی ترقی اور ترویج پر بھی روشنی ڈالی۔اس کے بعد مرکز کا سالانہ رپورٹ مرکز کے سیکریٹری جناب شبنم تلہ گامی نے پیش کیا۔کانفرنس کے پہلی نشست کی صدارت ریاست کے معروف نقاد محمد یوسف ٹینگ نے کی ۔جبکہ مہمان خصوصی کے طور ریاستی گورنر کے ایڈوائزر جناب خورشید گنائی موجود تھے کانفرنس میں مرکز کا سب سے بڑاایوارڈ شرف کمراز ریاست کے معروف ادیب شاعر اور نقاد ڈاکٹر عزیزحاجنی کودیا گیا۔ مجلس النسا جموں وکشمیرکو بحثیت بہترین ادبی یونٹ کے شرف کمراز دیا گیا ۔اس موقعے پر جناب غلام رسول حامی ، جیلانی کامران اور اصغر حسن سامعون کوخلعت حنفی سوپوری بہ اشتراک مجلس النسا جموں وکشمیر عطا گیا۔محی الدین حاجنی گولڈ میڈل کشمیریونیورسٹی کے کشمیری شعبے میں اول پوزیشن حاصل کرنے والی طالبہ شگفتہ اخترکو دیا گیا۔جبکہ جناب سید اخترمنصور کو اس سال کی بہترین کتاب کے لئے ایوارڈ سے نوازا گیا۔اس موقع پر مرکز کا ترجمان رسالہ پرو کا خصوصی نمبر اجرا کیا گیا،جو مرحوم محمداحسن احسن کی زندگی اور کارناموں پر مبنی ہے۔

Facebook Comments