نئی دہلی:آج دونواں ایوان کے مشترکہ اجلاس سے صدرجمہوریہ رام ناتھ کوند نے خطاب کیا،دوران خطاب انہوں نے نو منتخب اراکین پارلیمنٹ کو مبارکبادی پیش کرتے ہوئے مہاتماگاندھی کے اصولوں پر چلنے اور آئین ہند کی پاسداری کی نصیحت کی۔صدر جمہوریہ اپنے خطاب میں گزشتہ پانچ سال کے دوران کی سرکاری حصولیابیوں پر تفصیلاً بات رکھی وہیں آئندہ پانچ سالوں میں مرکزی سرکار کا ایجنڈہ کیا ہوگا اس پر بھی انہوں نے بات رکھی۔انہوں نے اپنے خطاب میں خواتین کی خودمختاری،کسانوی کی حالت میں بہتری کے ساتھ ساتھ نیو انڈیا کے پروگرام پر خوب زور دیا ،ساتھ ہی ساتھ دہشت گردانہ واقعات،جوانوں کی بہادری،نوجوانوں کے روزگار،پانی کی قلت اور سولرسسٹم کے فروغ کے ساتھ ساتھ خلا میں انسان کو بھیجنے کی مہم پر خاص طور پر سرکار کے مقاصد کو اُجاگر کیا گیا۔

اس دوران صدر جمہوریہ نے تین طلاق اور حلالہ جیسے مسئلے پر کہا کہ وقت کی ضرورت ہے کہ اب تین طلاق اور حلالہ کی روایت ختم ہو،انہوں نے اس نے نقصانات یا کسی اور پر بات نہیں رکھی البتہ یہ رائے ضرور ظاہر کی کہ اب تین طلاق اور حلالہ کو ختم کردیا جانا چاہیے،بتادیں کہ اس بار مودی سرکار پھر سے تین طلاق بل کو پارلیمنٹ میں پیش کرے گی جس کی مخالفت اپوزیشن کے ساتھ ساتھ نتیش کمار کی پارٹی جے ڈی یو نے بھی کرنے ک اعلان کردیا ہے۔دیکھنا دلچسپ ہوگا کہ ۲۰۲۰ سے پہلے این ڈی اے کو راجیہ سبھا میں اکثریت ملنے کے آثار نظر نہیں آرہے ہیں ایسی میں اگر ابھی سرکار تین طلاق بل ایوان میں رکھتی ہے تو ایک بار پھر اسکے لٹکنے کی زیادہ امید ہے۔

Facebook Comments