نئی دہلی:لوک سبھا سے پاس ہونے کے بعد تین طلاق کا راجیہ سبھا سے پاس ہونا قریب قریب ناممکن نظر آرہا ہے ،چونکہ کانگریس اور دیگر اپوزیشن پارٹیوں نے من بنا لیا ہے کہ اس بل میں بہت ساری خامیاں ہیں ،جب تک اس کو دور نہ کیا جاتا ہے تب تک اس کو راجیہ سبھا میں پاس نہیں ہونے دیا جائے گا۔بتادیں کہ کل یعنی اس سال اور مہینے کی آخری تاریخ کو یہ بل راجیہ سبھا میں پیش کیا جائے گا،لیکن اس سلسلے میں بڑی بات یہ سامنے آئی ہے کہ اب کانگریس نے کھل کر یہ اعلان کردیا ہے کہ وہ راجیہ سبھا میں تین طلاق بل کو پاس نہیں ہونے دیں گے،کانگریس کے چیف سکریٹری کے سی وینوگوپال نے کہا کہ ہماری پارٹی تین طلاق بل کو اس موجودہ شکل میں راجیہ سبھا سے پاس نہیں ہونے دے گی،انہوں نے مزید کہا کہ جب یہ بل لوک سبھا میں پیش کیا گیا تھا تب دس اپوزیشن پارٹیوں نے اس بل کی کھل کر مخالفت کی تھی۔یاد رہے کہ مودی سرکار مسلم خواتین کو ان کا حق دلانے کے نام پر ایک ایسا بل تیار کرلائی ہے جس کو مسلمانوں کی مذہبی آزادی میں سرکاری دخل اندازی کے طور پر دیکھا جارہا ہے ،چونکہ نکاح ،شادی اور میراث یہ سب ایسے مذہبی مسائل ہیں جو مسلم پرسنل لا بورڈ کے اندر آتے ہیں ،لیکن سرکار نے تین طلاق بل کے ذریعے مسلم پرسنل لا بورڈ کے اختیار کو کمزور کرنے کی کوشش کی ہے۔

Facebook Comments