نئی دہلی:گزشتہ کئی دنوں سے بی جے پی لیڈر،دلتوں کا بڑا چہرہ اور سب سے اہم رکن پارلیمنٹ کا خطاب جیتنے والے ادت راج کو بی جے پی نے اس بارٹکٹ نہیں دیا،اور ان کی جگہ پر مشہور گلوکار ہنس راج ہنس کو میدان میں اتار دیا ہے۔ایک طرف جہاں لوگوں کو امید تھی کہ ایک بار پھر بی جے پی ادت راج کو ٹکٹ دے گی ،اسی امید میں ادت راج بھی بی جے پی کی پوری حمایت کرتے ہوئے ٹوئٹر پر چوکیدار ادت راج بنے ہوئے تھے لیکن کل دوپہر بعد جیسے ہی ہنس راج ہنس کو بی جے پی نے ٹکٹ دے دیا تب ادت راج پارٹی سے ناراض ہوکر ٹوئیٹر سے لفظ چوکیدار ہٹا لیا ۔اس کے بعد بیان دینا شروع کردیا کہ میں بی جے پی میں غلطی سے آگیا تھا،پارٹی مجھے چھوڑ رہی ہے ،ملک بھر میں میری جماعت ہے میں دلت چہرہ ہوں ،اروند کجریوال نے مجھے پہلے ہی آگاہ کردیاتھا کہ اس بار پارٹی مجھے ٹکٹ نہیں دے گی۔راہل گاندھی نے بھی ایک بار پارلیمنٹ میں کہا تھا کہ آپ غلط پارٹی میں ہو۔

وہیں اس سے پہلے ڈاکٹر ادت راج نے پارٹی کو یہ دھمکی بھی دی تھی کہ اگر ان کو ٹکٹ نہیں دیا گیا تو وہ پارٹی چھوڑ دیں گے۔لیکن اس بیچ یہ بھی دیکھنے کو ملا کہ ادت راج نے پانچ گھنٹے بعد ہی اپنے ٹوئٹر پر چوکیدار لفظ جوڑ لیا۔لیکن اب خبر ہے کہ انہوں نے ایک بار پھر اپنے ٹوئٹر سے چوکیدار ہٹا دیا ہے چونکہ انہوں نے آج صبح کانگریس کا ہاتھ تھام لیا ہے اور امید ہے کہ دہلی کی شمال مغربی سیٹ سے کانگریس انہیں امیدوار بنائے چونکہ اب وہی ایک سیٹ باقی ہے جہاں سے کانگریس نے امیدوار نہیں اتارے ہیں ۔اس لئے اگر دہلی سے کانگریس ٹکٹ دیتی ہے تو وہی ایک سیٹ باقی ہے ،لیکن یہ طے ہے کہ ادت راج نے چوکیداری چھوڑ دی ہے۔

Facebook Comments