لکھنو:طالب علموں نے پورے ایک سال تک انگلش زبان کی پڑھائی کی اور اب عالم یہ ہے کہ انہیں اردو زبان کا امتحان دینا ہوگا،وہیں جو ڈرائنگ کی پڑھائی کرتا تھا اب ان بچوں کو کامرس کا امتحان دینا پڑے گا،یہ بات سننے میں آپ کو عجیب لگے لیکن سچائی یہی ہے،اور یہ کارنامہ اترپردیش کے درگاپوری کے بلومنگ فلاورز اسکول نے کیا ہے۔لکھنو کے ہائی اسکول میں ایڈمٹ کارڈ پراسکول کے دو طالب علموں کے ساتھ کچھ ایسی ہی لاپرواہی ہوتی نظر آئی ہے۔اسی طرح ایودھیا سنگھ انٹر کالج کے ۳۱ طلبا کے ایڈمٹ کارڈ پر بھی غلط سبجیکٹ لکھ دیا گیا ہے،چونکہ بورڈ کے مین سبجیکٹ کا امتحان ۱۲ فروری سے شروع ہونے ہیں ایسے میں ایڈمٹ کارڈ میں ترمیم کرنے کیلئے دونوں اسکولوں کے نمائندوں نے ڈی آئی او ایس دفتر اور یوپی بورڈ دفتر میں تحریری شکایت درج کرائی ہے،وہیں ڈی آئی او ایس دفتر میں ایڈمٹ کارڈ میں سبجیکٹ کےساتھ ساتھ تصویر بھی بدلنے کی شکایت ملی ہے،سعادت گنج میں واقع یونک ہائی اسکول کے نمائندوں نے بتایا کہ ہائی اسکول کے طلبا و طالبات کے بورڈ امتحان کے فارم سائبر کیفے سے بھروائے تھے ،جب ایڈمٹ کارڈ آیا تو دو طالبات کی تصویر ایک دوسرے سے بدلی ہوئی تھی،،طیبہ قریشی کی جگی صوبیہ قریشی اور صوبیہ کی جگہ طیبہ قریشی کی تصویر لگی ہوئی ہے،دونوں طالبات کی آئی ڈی دے کر امتحان میں شریک کرنے کی درخواست کی ہے،اس اسکول کے علاوہ کئی دوسرے اسکول بھی ہیں جہاں سے ایڈمٹ کارڈ میں کافی غلطیاں اس بار دیکھنے کو مل رہی ہیں۔ڈی آئی او ایس مکیش کمار سنگھ نے کہا کہ ایڈمٹ کارڈ پر تصویر بدل جانے کی خبر ملی ہے،ایسی غلطی کیلئے اسکول سے صحیح تصویر کی تصدیق کراکر ایڈمٹ کارڈ پر لگانے کے لئے کہا گیا ہے اور اس کے علاوہ جن بچوں کا سبجیکٹ بدل گیا ہے ان لئے بھی اسکول انتظامیہ اور بورڈ نے مل کر راستہ نکالا ہے،بچوں کو کوئی دقت نہیں ہوگی۔

Facebook Comments